برطانیہ کی تاریخ میں ماحولیاتی بقا کی خاطر سب سے بڑا احتجاجی دھرنا

 

لندن کی تقریباً تمام عوامی مقامات پر “ایکسٹنکشن ریبیلین” نامی فلاحی تنظیم کے کارندوں نے احتجاج کیا اور حکومت کو بدلتے ہوۓ موسمی حالات پر قابو پانے کے لیے ہر ممکن اقدامات کو سر انجام دینے کی ترغیب دی- اس احتجاج میں نوجوانوں کے ساتھ ساتھ بچے، خواتین اور ادھیڑ اور ضعیف افراد بھی دلچسپی کے ساتھ شرکت کرتے نظر آے

ایکسٹنکشن ریبیلین ایک ایسی فلاحی تنظیم ہے جسکا قیام چھ ماہ قبل ہوا جبکہ اس تنظیم کا مطالبہ یہ تھا کہ حکومت صنعتکاری کے سمی اثرات کو مد نظر رکھتے ہوۓ ماحول دشمن صنعتوں کو تالا لگاے، ایندھن کے استمال کو کم سے کم کرے، موسمی حقائق کو عوام کے سامنے لانے سے گریز نہ کرے اور سن ٢٠٢٥ تک کاربن ڈائی آکسائڈ کے اخراج پر مکمل طور پر قابو پاے

 

اس تنظیم نے  دو دفع حکومت کو قانونی سرگرمی کے ذریعے اپنے مطالبات سے آگاہ کیا تھا لیکن حکومت کے کان نہ دھرنے کی صورت میں گزشتہ چار ماہ میں اس تنظیم کے کارندوں نے سخت تحریک شروع کی اور اس کے بابت حکومت کو بھی متنبہ کیا بعدازاں لندن کی سڑکوں، تجارتی شاہراہوں اور بازاروں میں ہزاروں کی تعداد میں عام لوگوں نے ١٥ اپریل سے پر امن احتجاج نوشت کروانا شروع کیا اور یہ احتجاج دس روز تک جاری رہا

ایک خاتون نے انٹرویو میں اپنی راے کا اظہار کرتے ہوۓ بتایا کہ مجھے اپنے اور اپنے بچوں کی مستقبل کی فکر ہے اس لیے میں یہاں ہوں؛ جبکہ دیگر افراد کی مزید کہا کہ بڑھتی ہویی صنعتکاری ماحول کی تباہ کاری کا سبب ہے اور دنیا میں بڑھتے ہوۓ خطرناک موسمی حالات جیسے سیلاب، قحط، جنگلوں میں آگ وغیرہ انسانیت کی بقا کے لیے خطرہ ہیں

اس دوران ایک جانب یہ ماحول دوست تنظیم ماحولیاتی نظام میں بہتری اور بزنس مافیا کے بارے میں اپنی راے کا اظہار مختلف اطوار سے کرتی رہی جبکہ دوسری جانب ان احتجاج کی وجہ سے شہر کا نظام درہم برہم بھی ہوگیا اور ہزاروں کی تعداد میں شکایتیں موصول ہونا شروع ہو گئیں-

 

برطانویذرائع نے دعوہ کیا تھا کے شہر کی پچپن بس روٹ متاثر ہیں اور شاہراہیں بند ہونے کے سبب پانچ لاکھ افراد کو مشکلات در پیش ہیں

 

 

البتہ لندن کے میئر صادق خان کی ہدایات پر لندن پولیس نے دھرنوں کی روک تھام کا ذمہ لیا اور راستے میں آنے والے افراد کو حراست میں لے لیا- برطانوی میڈیا کے مطابق ہزار ١٠٠٠ سے بھی زائد کارندوں کو زیر حراست لیا گیا جبکہ واضح رہے کے اس تنظیم نے حکومت کو مطالبات کو پورا نہ کرنے پر انتیس اپریل تک لندن کو مکمل طور پر بند کر دینے کی دھمکی بھی دی ہے

 

برطانیہ کی تاریخ میں ماحولیاتی بقا کی خاطر سب سے بڑا احتجاجی دھرنا
5 (100%) 4 votes
Haider Saqib

Posted by Haider Saqib

Leave a reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *